امریکی سفارتخانہ نئی دہلی نے شراکت داری 2020 امریکہ-بھارت اعلی تعلیم ریسرچ تعاون پروگرام کا اعلان کیا

امریکی سفارتخانہ نئی دہلی نے آج شراکت داری 2020 کے عنوان سے ایک پروگرام کا اعلان کیا جس کا مقصد 21 ویں صدی کے اہم شعبوں میں بھارتی اور امریکی اداروں کے درمیان تحقیقی شراکت داریاں قائم کرنا ہے۔

اس منصوبہ کے تحت امریکی محکمہ خارجہ نے اوماہا کی نیبراسکا یونیورسٹی کو 1.15 ملین ڈالر کی رقم فراہم کی ہے، جو مسابقتی بنیاد پر امریکی یونیورسٹیوں کو اپنے بھارتی ہم منصب اداروں کے ساتھ مشترکہ تحقیق کرنے کے لئے ذیلی رقم فراہم کرے گی۔ اس کا مقصد اعلی تعلیم میں تعاون کے ذریعے امریکہ اور بھارت کے درمیان اسٹریٹجک شراکت داری کو مضبوط کرنا اور متعلقہ اقتصادی ترقی کو فروغ دینا ہے۔

شراکت داری 2020 میں جن شعبوں پر توجہ دی جائے گی ان میں اعلی درجے کی انجینئرنگ، مصنوعی انٹیلی جنس، عوامی صحت اور توانائی و دیگر شامل ہیں۔ مرکز برائے اسٹریٹجک اور بین الاقوامی مطالعہ مشاورتی کردار ادا کرے گا۔ وہ موجودہ کامیاب شراکت داریوں کی شناخت کرے گا اور مقامی حکومت اور سول سوسائٹی کے ساتھ رابطے قائم کرے گا۔

بھارت میں امریکی سفیر کینتھ آئی جسٹر نے کہا،’’اعلی تعلیم کے شعبہ میں تعاون امریکہ ۔ بھارت تعلقات کا ایک مضبوط حصہ ہے۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ ’’شراکت داری 2020 منصوبہ کے ذریعہ ہم مشترکہ تحقیق و تعلیم کو فروغ دیکر دونوں ملکوں کو اکٹھے لانا اور انتہائی اہم چیلنجوں کا حل تلاش کرنا چاہتے ہیں۔ تحقیق اختراع کا باعث بنتی ہے اور یہ ہمارے دونوں ممالک کو اقتصادی فوائد میں تبدیل کرے گی۔

شراکت داری 2020 میں حصہ لینے کے خواہاں تعلیمی ادارے  یہ ویب سائٹ دیکھیں:

https://www.unomaha.edu/international-studies-and-programs/engagement/partnership2020/index.php.