امریکی قونصلیٹ جنرل کولکاتا

امریکی سفارت کاری کی تاریخ میں کولکتہ کو ایک ممتاز حیثیت حاصل ہے کیوںکہ یہاں واقع امریکی قونصل خانہ دنیا بھر میں قدیم ترین امریکی قونصل خانوں میں سے ایک اور بھارت میں سب سے پرانا ہے۔

صدر جارج واشنگٹن نے 19 نومبر 1792 کو نیوبری پورٹ کے بنجامن جوائے کو کولکتہ میں پہلے امریکی قونصل کے طور پر نامزد کیا۔ وزیر خارجہ تھامس جیفرسن جو بعد میں امریکہ کے تیسرے صدر بنے، کے مشورے اور سینیٹ کی رضامندی سے صدر واشنگٹن نے جوائے کو21  نومبر 1792 کو اُس آفس کی ذمہ داری سونپ دی۔

جوائے، تاہم، اپریل 1792میں کولکتہ پہنچے۔ انہیں برطانوی ایسٹ انڈیا کمپنی نے قونصل کے طور پر کبھی تسلیم نہیں کیا تاہم انہیں ’’۔۔۔اِس ملک کے سول اور فوجداری عملداری کے تابع ایک تجارتی ایجنٹ کے طور پر یہاں رہائش کی اجازت دے دی۔‘‘

اس نامبارک آغاز کے باوجود، بنجامن جوائے کی آمد کولکتہ کے ساتھ اور بلا شبہ پورے بھارت کے ساتھ امریکہ کے ایک طویل سرکاری رشتہ کا آغاز تھا۔