کاروبار

’’امریکیوں کا اصل کاروبار تجارت ہے،‘‘ یہ بات امریکی صدر کیلوین کولج نے1925 میں کہی تھی جو آج 21 ویں صدی میں بھی صادق آتی ہے۔ آج چھوٹی، متوسط اور بڑی کمپنیوں میں امریکی کاروباری افراد بڑی فعالیت سے پوری دنیا کے تجارتی شراکت داروں کے ساتھ کاروبار کر رہے ہیں۔ امریکہ اور ہندوستان، دونوں جمہوریتوں، نے ایک زبردست تجارتی شراکت قائم کرلی ہے۔ ہندوستان اس وقت دنیا کی تیز ترین نمو والی بڑی معیشتوں میں سے ایک ہے جہاں نوجوانوں کی بڑی آبادی اور ایک بڑا اور بڑھتا ہوا متوسط طبقہ ہے، اور اُسے بنیادی ڈھانچے کی زبردست ضرورت ہے۔

امریکی کمپنیوں کیلئے ہندوستان کے بنیادی ڈھانچے کی ترقی اور پائیدار ارتقائی منصوبوں میں شرکت کرنے کے زبردست کاروباری مواقع موجود ہیں۔ ہم سفارت خانے کے ذریعہ امریکی کمپنیوں کو ہندوستان میں کاروباری مواقع تلاش کرنے میں مدد کرتے ہیں۔ امریکہ ہمیشہ کاروباری امور کیلئے اپنا دامن کھلا رکھتاہے، اور ہم ہندوستانی کمپنیوں کی امریکہ میں سرمایہ کاری اور دلچسپی کا بھی خیرمقدم کرتے ہیں، جس سے دونوں ممالک میں روزگار اور خوشحالی پیدا ہوگی۔

جب دوطرفہ تجارت فروغ پاتی ہے تو دونوں ملکوں کو فائدہ ہوتا ہے۔ طرفین میں مصنوعات اور افکار کے تبادلے سے اختراع پسندی کو مہمیز ملتی ہے جو ایجادات کی طرف رہنمائی کرتی ہے۔ نتیجتاً ہمارے معیارر زندگی میں بہتری آتی ہے۔ ہم نے اطلاعاتی و مواصلاتی ٹکنالوجی، ادویہ سازی، آلات طب، قابل تجدید توانائی، زراعت اور بنیادی ڈھانچے کے شعبے میں ایسی اختراعات وایجادات کا مشاہدہ کیا ہے۔ ان پیش رفتوں میں سے متعدد تو ہمارے کاروباری و افرادی سطح کے اشتراک اور مشترکہ اقدامات کا نتیجہ ہیں۔

ہم ہندوستان کے ساتھ ملکر’’مشترکہ خوشحالی کو فروغ دینے کیلئے‘‘کام کر رہے ہیں،  جیسا کہ سکریٹری کیری نے کہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا ’’دنیا کی قدیم ترین جمہوریت اور دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے درمیان دوستی یقیناً نہایت اہم ہے اور امریکہ نے ہمارے اسٹریٹجک رشتے میں گہری سرمایہکاری کی ہے۔‘‘

ہم سفارتخانہ میں ابتک حاصل شدہ پیش رفتوں کی حمایت کریں گے اور دونوں ملکوں کے درمیان تجارت کیلئے دروازوں کو مزید کشادگی سے کھولنے کے طریقوں مسلسل تلاش کرتے رہیں گے۔ جب آپ کاروبارسے متعلق یہ صفحات پڑھیں اورآپ کو لگے کہ اب بھی کچھ سوالات ہیں تو بلا تکلف آپ ہمارے اقتصادی، تجارتی اور زراعتی اہلکاروں سے براہ راست رابطہ کریں۔ یہاں ہمارا کام ہی بات چیت کے ذرائع کو کھلا رکھنا، اور امریکی کمپنیوں کو ہندوستان میں تجارت کیلئے مدد فراہم کرنا ہے۔

اٹلانٹک کونسل یو ایس انڈیا ٹریڈ انیشیٹو ورکشاپ میں سفیر رچرڈ آر ورما کا خطاب: امریکہ/بھارت تجارت کو اگلے مرحلے تک لیجانا، نئی دہلی (جون 27، 2016)

ارون ایم کمار، اسسٹنٹ سیکرٹری برائے گلوبل مارکیٹس اور ڈائرکٹر جنرل برائے امریکہ و فارن کمرشیل سروس کا ہوٹل لیلا، چانکیہ پوری، نئی دہلی میں خطاب (مئی 18، 2016) (PDF 250 KB)